Friday, December 10, 2010

موبی لنک:سچا جذبہ، لوگو چوری کا



SUCH TRUTH. SUCH PASSION. SUCH JAZBA

یہ الفاظ ہیں معروف سیلولر کمپنی کے نئے یوتھ پیکیج کی برانڈ پوزیشننگ کے ،جسے کمپنی نے نوجوانوں سے وابستہ قرار دیتے ہوئے اپنی پروموشنل اسٹریٹیجی کے طور پر اختیار کیا ہے۔

چند روز قبل اشتہاری ہورڈنگز اوردیگرابلاغی ذرائع سے لانچ کی گئی اشتہاری مہم میں کمپنی نے Such Jazba™ کے متعلق نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ آپ کی روایات کو کیاگیا سلام ہے۔

ان روایات کوجو ذاتی اور عالمی سطح پر تسلیم شدہ ہیں۔
وہ روایات جو آپ کو اس سے ذیادہ ثابت کرتی ہیں جتنے آپ ہیں۔
وہ روایات جو آپ کو بہتری کے مواقع مہیا کرتی ہیں۔
اب وقت آگیاہے کہ دنیا میں خود کو منوائیں۔
وہ دنیا جہاں ہر لمحے،ہرچیز،ہرفرد آپ کو یاد دلاتا ہے کہ آپ خود اپنے لئے سب سے بہتر ہیں۔
اسی لمحے ہمارے ساتھ شامل ہوں جب آپ کہیں "سچ اپنائو،جذبہ جگائو"

[نوٹ:موبی لنک کے اشتہاری سلوگنز کے ترجمے میں صوتی آہنگ کی عدم موجودگی پر قارئین سے پیشگی معذرت کے ساتھ]

Web page view of Mobilink's Youth Package SUCH JAZBA

ان خوبصورت جذباتی نعروں سے مزین "یوتھ پیکیج"کے لئے "سچ جذبہ"کو اختیار کرتے وقت مذکورہ ادارے نے نوجوانوں کو کیا سوچ اور سمجھ کر اپنے برانڈ کے گر داکٹھا ہونے کی دعوت دی،یہ بات تو بہتر طریقے سے متعلقہ افراد ہی بتا سکتے ہیں لیکن جو بات شرمناک قرار دی جا سکتی ہے وہ یہ کہ "اس پوری مہم میں باقی سب کچھ ہے سوائے سچائی کے"۔


نئی مہم کے لئے اختیار کیا گیا لوگو برازیل سے تعلق رکھنے والی ایک کمپنی
http://abduzeedo.com/creating-crazy-cool-logo   

کا تیار کردہ ہے۔جس میں معمولی ردوبدل کر کے اسے اپنا لیا گیا ہے۔اور اس دھڑلے سے اپنایا گیا کہ روایتی چور بھی شرما گئے ہوں گے۔

Web Page view of Original Logo unethically used by Mobilink
اوپر دئے گئے لنک اور تصویر میں موجود لوگو اور موبی لنک کی جانب سے چلائی جانے والی حالیہ مہم کے لوگو میں اس کے سوا کوئی فرق نہیں کہ ایک برازیلین 
ڈیزائنرکے بلاگ پر24جنوری 2008ء کو اپ لوڈکی گئی تحریر میں اسے "زگورا" نامی کمپنی کے لئے بنایا گیا لوگوقرار دیا گیا ہے۔

صاحب تحریر کا کہنا ہے کہ انہوں نے مذکورہ لوگو2005ء میں اپنے کلائنٹ کے لئے بنایا تھا۔جب کہ موبی لنک نے اسے تقریبا 5 برس بعد دسمبر2010میں ایک کلر کم کر کے نئے لفظوں کے ساتھ شائع کیا ہے۔

Mobilink's SUCH JAZBA exposed, Professionalism.......??????  

کوئی بھی معاشرہ یہ برداشت نہیں کر سکتا کہ روایات کے نام پر اسے خصوصا اس کے نوجوانوں کوایسی چیزیں سکھائی جائیں جو جھوٹ پر مبنی ہوں۔ دوسروں کی ایسی نقل کر کے حاصل کی گئی ہوں جس میں چوری بھی شامل ہو۔


اسی مسلمہ اصول کی بناء پر پاکستانی معاشرہ بھی اس بات کا مکلف نہیں ہو سکتا کہ وہ "جھوٹ اورچوری"جیسی گھنائونی عادت کو اپنائے یا اسے نوجوانوں کے لئے قابل تقلید قرار دے۔

6 comments:

  1. موبائل کمپنیوں کے کیا ہی کہنے ۔۔
    ان لوگوں نے تو روٹی سے زیادہ سستے کر رکھے ہيں اپنے کالگ ریٹ ۔
    ایسا لگتا ہے ہمارے نوجوانوں کو مستقبل اور رہنمائی کی نہيں ۔
    بلکہ ساری رات گپ لگانے کی ضرورت ہے ۔
    اللہ ہی حافظ ہے ہمارے معاشرے کا ۔

    ReplyDelete
  2. ان لوگوں کی اخلاقیات کلبوں میں ان کی بیٹیوں کے ساتھ ناچتی ہے اور یہ لوگ وہی چیزیں دوسروں پر لاگو کرتے ہیں ۔۔

    ReplyDelete
  3. v.good
    all Pakistani network commendation servers allah bless you my nation always
    by leads and gentlemen
    t.c
    faithfully dilawar khan

    ReplyDelete
  4. Blog Author
    You are doing great job in urdu.
    Interesting to see a blog in urdu.
    keep it up

    ReplyDelete
  5. Thanks Mehwish Mushtaq.
    Hope You will continue your supports.
    You May also visit thenewstribe.co.uk for more interesting content in Urdu and English

    ReplyDelete